ISLAMIC VIDEOS TUBE: شیعہ سے اصل اختلاف کس بنیاد پر ہے؟ شیعہ سے اصل اختلاف کس بنیاد پر ہے؟ - ISLAMIC VIDEOS TUBE
Latest News
Friday, April 3, 2015

شیعہ سے اصل اختلاف کس بنیاد پر ہے؟

·     میرا شیعہ سے اصل اختلاف توحید پر ہے۔ شیعہ کا خدا جھوٹ بولتا ہے، میرا خدا جھوٹ نہیں بولتا۔
·     جس طرح مسلمانوں کی کتابیں چھ ہیں حدیث کی؛ بخاری، مسلم، ترمذی، ابو داؤد ، نسائی وغیرہ ۔ ان چھ کتابوں میں جو بات درج ہوگی مسلمانوں کے حجت ہے۔مسلمان بخاری شریف کا انکار کر سکتا ہے؟ (ہرگز نہیں)۔
شیعہ کی بنیادی کتابیں چھ نہیں ہیں؛ چار ہیں۔ جن کو صحاح اربعہ اور اصول اربعہ بھی کہتے ہیں۔ جو چیز ان اصولِ اربعہ میں ہو اس سے پوری دنیا کا کوئی شیعہ انکار نہیں کر سکتا۔ (نہ خمینی کر سکتا ہے، نہ ساجد نقوی کر سکتا ہے، نہ لبنان کا شیعہ کر سکتا ہے، نہ افغانستان کا شیعہ، نہ سعودیہ عرب کا شیعہ  کر سکتا ہے) یہ کتابیں شیعہ کے تمام مکاتب ِفکر کے نزدیک اصولی اور بنیادی ہیں۔

پہلی کتاب: الجامع الکافی (3 حصہ ہیں،  8 جلدیں ہیں)
پہلا حصہ : اصولِ کافی (عقائد؛ 2 جلدیں)
دوسرا حصہ: فروع کافی(مسائل؛ 5 جلدیں)
روضۃ الکافی(بارہ اماموں کے حالات درج ہیں؛ 1 جلد)
مصنف: محمد بن یعقوب کلینی (شیعہ مذہب کا سب سے بڑا محدث؛ جس طرح مسلمانوں کے نزدیک امامِ بخاری کا درجہ ہے ؛ اسی طرح شیعہ کے نزدیک اس کا درجہ ہے) ۔

دوسری کتاب: تہذیب الاحکام ۔
تیسری کتاب: الاستبسار ۔
چوتھی کتاب: من لایحضرہ الفقیہ۔
اصول کافی میں ایک باب باندھا گیا ہے "باب البداء"
امام سے پوچھا گیا کہ بداء کا کیا معنی؟ تو انہوں نے کہا کہ اللہ تعالیٰ کو کبھی کبھی بداء ہو جاتا ہے ۔ پوچھا گیا کہ بداء کس کو کہتے ہیں۔ بتایا گیاکہ بداء کا معنی منکر ہو جانا ، فیصلے کو بدل دینا ، جھوٹ بولنا ۔ تو محمد بن یعقوب کلینی کہتا ہے کہ اللہ تعالٰی کو کبھی کبھی بداء ہو جا تا ہے۔ اللہ تعالٰی کبھی اپنےفیصلے کا انکار کر دیتا ہے تو اس سے پوچھا گیا ، امام جعفر صادقؒ سے (نعوذ باللہ) محمد بن یعقوب کلینی کہتا ہے کہ میں نے پوچھا (امام جعفر صادقؒ سے) کہ یہ تو جھوٹ ہے تو امام جعفر صادقؒ نے کہا جھوٹ ووٹ ہو جو مرضی ہو ؛ دیکھو! اللہ تعالٰی کبھی کبھی فیصلہ کرتا ہے اور اس کے خلاف کردیتا ہے ۔ دیکھو! خدا نے پہلے فیصلہ کیا تھا کہ میرے باپ امام باقر کے بیٹے اسماعیل کو اس  کا جانشین بنائے گا لیکن بعد میں میرا وہ فیصلہ تبدیل کرکے خدا نے مجھے اس کا جانشین بنا دیا ہے۔اس لیے اللہ تعالٰی کبھی کبھی بداء کر دیتا ہے پوچھا گیا یہ تو جھوٹ کا نام ہے ۔ امام نے کہا تم جھوٹ کی بات کرتے ہو ایک لاکھ چوبیس ہزار انبیاء میں کوئی پیغمبر ایسا نہیں جس کا ایمان اسی بداء پر نہ ہو ، جو ایمان بداء پر نہیں رکھتا چاہے نبی  ہو، چاہے ولی ہو مسلمان نہیں ہو سکتا ۔ ہر مسلمان کا یہ عقیدہ ہے کہ اللہ تعالٰی کو بداء ہوتا ہے ، اللہ تعالٰی کبھی جھوٹ بولتا ہے ، اللہ تعالٰی کبھی منکر ہو جاتا ہے ۔ یہ اصول کافی میں  ہے ۔ شیعہ کی بنیادی کتاب میں خدا کا تصور یہ ہے جو جھوٹ بولے، جو منکر ہو جائے ، خدا کا تصور یہ ہے جو اپنا فیصلہ تبدیل کردے ۔ لیکن میرا قرآن ، میرے پیغمبر کا قرآن کہتا ہے  "ومن اصدق من اللہ قیلا" خدا سے زیادہ سچا کوئی نہیں ۔ خدا سے زیادہ صداقت والا کوئی نہیں ۔ قرآن کہے خدا سے سچا کوئی نہیں ، اصولِ کافی کہے خدا کے جھوٹ پر ایمان نبیوں نے رکھا ہے ۔ فیصلہ تُو کر کہ تیرا خدا کون ہے ؛ شیعہ کا خدا کون ہے ۔ تیرا خدائی کا تصور علیحدہ ہے، شیعہ کا خدائی کا تصور علیحدہ ہے ۔
(مؤرخ اسلام علامہ ضیاء الرحمٰن فاروقی شہید رحمہ اللہ تعالٰی کی تقریر شیعہ کافر کیوں ؛ اکوڑہ سے ماخوذ)

  • Blogger Comments
  • Facebook Comments

0 comments:

Post a Comment

Item Reviewed: شیعہ سے اصل اختلاف کس بنیاد پر ہے؟ Rating: 5 Reviewed By: Pakistan Media Today