ISLAMIC VIDEOS TUBE: دین کی خدمت بغیر باطل اور طاغوت کا رد اور انکار کیے (کاملاً)نہیں کی جا سکتی۔ دین کی خدمت بغیر باطل اور طاغوت کا رد اور انکار کیے (کاملاً)نہیں کی جا سکتی۔ - ISLAMIC VIDEOS TUBE
Latest News
Thursday, April 16, 2015

دین کی خدمت بغیر باطل اور طاغوت کا رد اور انکار کیے (کاملاً)نہیں کی جا سکتی۔

دین کی خدمت بغیر باطل اور طاغوت کا رد اور انکار کیے (کاملاً)نہیں کی جا سکتی۔کیونکہ قرآن کریم فرقانِ حمید میں جگہ جگہ جہاں امر بالمعروف کا حکم ہوا وہیں جابجا نہی عن المنکر کا ارشاد بھی ساتھ ہی نازل ہوا۔ اس ربط اور نسبت سے یہ بات واضح سمجھ آتی ہے کہ اللہ تعالٰی کو ہم سے دین کی خدمت بہر دو صورت یعنی حق کی دعوت اور باطل کے رد سے مطلوب ہے۔ اگر ہم ان میں سے کسی ایک حکم کو بھی پورا نہیں کر رہے تو اس کا مطلب یہی ہے کہ ہم مکمل دین کی خدمت نہیں کر رہے۔ بالفاظِ دیگر نیکی کے حکم کے ساتھ ساتھ برائی اور بروں سے روکنا بھی نہایت ضروری ہے۔ چنانچہ حق اسی وقت صحیح طور پر بیان ہوگا کہ جب باطل اور طاغوت (شیطان) کا رد کیا جائے۔ تاہم یہ سنتِ الٰہی بھی ہے کہ حق کو سمجھانے کے لئے باری تعالٰی نے جو کلمہ تمام امتوں کو مرحمت فرمایا وہ "لا الٰہ الا اللہ" ہے۔ یعنی اللہ تعالٰی اپنا معبودِ حقیقی اور احد ہونے کو تمام معبودانِ باطلہ اور تمام طواغیت کے رد اور انکار سے سمجھا رہے ہیں۔ فرمایا: "لا الٰہ الا اللہ" (نہیں کوئی بھی معبود سوائے اللہ کے) یہاں لفظِ لا سے ابتداء ؛سے ہی طاغوت کا انکار ہوتا ہے، تب ہی جا کر حق یعنی اللہ تعالٰی کا معبودِ حقیقی ہونے کا اصل مفہوم سمجھ آتا ہے۔
مختصر یہ کہ دین کی صحیح معنوں میں خدمت صرف اور صرف میٹھی میٹھی باتوں سے نہیں ہوتی ؛ کہ دین کے مخالفین بھی آپ سے خوش رہیں اور آپ اپنے زعم میں دین کا کام بھی کرتے رہیں۔ بلکہ اصل مقصود تو مکمل دین کی خدمت ہے جو کہ باطل اور دین دشمنوں کے رد سے پایہ تکمیل کو پہنچتی ہے۔ واللہ اعلم بالصواب۔

  • Blogger Comments
  • Facebook Comments

0 comments:

Post a Comment

Item Reviewed: دین کی خدمت بغیر باطل اور طاغوت کا رد اور انکار کیے (کاملاً)نہیں کی جا سکتی۔ Rating: 5 Reviewed By: Pakistan Media Today