ISLAMIC VIDEOS TUBE: یومِ عاشوراء یعنی دسویں محرم الحرام کا روزہ مشروع ہے یومِ عاشوراء یعنی دسویں محرم الحرام کا روزہ مشروع ہے - ISLAMIC VIDEOS TUBE
Latest News
Thursday, October 15, 2015

یومِ عاشوراء یعنی دسویں محرم الحرام کا روزہ مشروع ہے


یومِ عاشوراء یعنی دسویں محرم الحرام کا روزہ مشروع ہے ، سیدنا ابن عباس رضی اللہ عنہما کہتے ہیں:
“جب رسول اللہ ﷺ نے یومِ عاشوراء کا روزہ رکھا اور اس کے بارے میں حکم بھی دیا تو صحابہ نے عرض کی ، اے اللہ کے رسول ! اس دن کو تو یہود و نصاریٰ تعظیم کرتے ہیں تو رسول اللہ ﷺ نے فرمایا، اللہ تعالیٰ نے چاہا تو ہم اگلے سال نویں محرم کا بھی روزہ رکھیں گے۔”
ابنِ عباس رضی اللہ عنہما بیان کرتے ہیں کہ اگلا سال آنے سے پہلے ہی رسول اللہ ﷺ فوت ہوگئے ۔ (صحیح مسلم : ۱۱۳۴)
اس حدیثِ مبارکہ سے نویں اور دسویں محرم الحرام کے روزے کی مشروعیت ثابت ہوتی ہے ، یہ بھی معلوم ہوا کہ یومِ عاشوراء دسویں محرم ہے ۔
حکم بن اعرج رحمہ اللہ بیان کرتے ہیں کہ عبداللہ بن عباس رضی اللہ عنہما چاہِ زمزم کے پاس اپنی چادر کو تکیہ بنا کر ٹیک لگائے بیٹھے تھے، اسی اثنا میں میں بھی پہنچ گیا ، میں نے عرض کی کہ مجھے یومِ عاشواء کے بارے بتائیے ، فرمانے لگے :
“جب آپ محرم کا چاند دیکھ لیں تو گنتی شروع کردیں اور نویں محرم کو صبح روزہ رکھ لیں ، میں نے پوچھا کہ رسول اللہ ﷺ کا یہی عمل مبارک تھا ؟ فرمایا ، ہاں ۔” (صحیح مسلم : ۱۱۳۳)
حافظ بیہقی اس روایت کا مطلب واضح کرتے ہوئے لکھتے ہیں:
“گویا کہ سیدنا ابن عباس رضی اللہ عنہما کی مراد یہ ہے کہ یومِ عاشوراء کے ساتھ نویں محرم کا روزہ بھی مشروع ہے ، آپ نے سائل کے جواب میں ہاں اس لیے کہہ دیا کہ وہ خود رسولِ کریم ﷺ سے نویں محرم کے روزے کا ارادہ بیان کرتے ہیں۔” (السنن الکبریٰ للبیہقی : ۲۸۷/۴)
اس کی وضاحت سیدنا ابن عباس رضی اللہ عنہما کے اس قول سے ہوتی ہے ، فرماتے ہیں:
صوموا التاسع و العاشر و خالفوا الیھود.
“نویں اور دسویں محرم کا روزہ رکھ کر یہودیوں کی مخالفت کرو (وہ صرف یومِ عاشوراء کا روزہ رکھتے تھے )۔” (السنن الکبریٰ للبیہقی : ۲۸۷/۴ ، وسندہ صحیح)

  • Blogger Comments
  • Facebook Comments

0 comments:

Post a Comment

Item Reviewed: یومِ عاشوراء یعنی دسویں محرم الحرام کا روزہ مشروع ہے Rating: 5 Reviewed By: Pakistan Media Today